کرکٹ

بائیں سے: سابقہ ​​بھارتی کرکٹرز سنیل جوشی ، ہروندر سنگھ اور راجیش چوہان سلیکٹرز کے عہدوں کے انٹرویو کے لئے بی سی سی آئی ہیڈ کوارٹر پہنچ گئے۔
تصویری کریڈٹ: پی ٹی آئی

ممبئی: مدن لال ، آر پی سنگھ اورسولکسانہ نائک پر مشتمل کرکٹ ایڈوائزری کمیٹی (سی اے سی) نے سنیل جوشی اور ہروندر سنگھ کے نام دو ہندوستانی سلیکٹرز کے عہدے کے لئے تجویز کیے ہیں جو ایم ایس کے کے عہدے کے بعد خالی رہ گئے تھے۔ پرساد اور گیگن کھوڈا ختم ہوگئے۔

آئی اے این ایس سے بات کرتے ہوئے لال نے کہا کہ تینوں نے محسوس کیا کہ جوشی اور ہروندر بل پر بہترین لگتے ہیں۔ “ہم نے تمام امیدواروں کا انٹرویو لیا اور ہم نے متفقہ طور پر محسوس کیا کہ ان افراد نے اس بل کو سب سے زیادہ مناسب قرار دیا ہے۔ ہم نے ان کو کسی معیار پر واقعی نشان نہیں بنایا ، یہ بات ہم تینوں لوگوں کو اس بات پر قائل کرنے کے بارے میں زیادہ ہے کہ ان کے پاس پرساد اور کھوڈا کے خالی عہدوں سے اقتدار سنبھالنے کے لئے درکار مہارت موجود ہے۔

مدت ملازمت کے بارے میں پوچھے جانے پر لال نے کہا: “ہم نے نام بھیجے ہیں اور بی سی سی آئی اسے سرکاری طور پر بھیجے گی۔ پانچ ماہ کے بعد ان کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے گا اور جب دیگر تین سلیکٹرز کی مدت پوری ہوجائے گی تو ہم تازہ امیدواروں کا بھی انتخاب کریں گے۔

بدھ کو یہ تینوں ممبئی میں بی سی سی آئی کے ہیڈکوارٹر میں ملے اور انہوں نے چیف سلیکٹر کے عہدے کے لئے جوشی کے نام کی سفارش کی ، ہورویندر کا دوسرا نام ہے جس نے انہیں فہرست میں سے چن لیا ہے جس میں لکشمن سیورام کرشنن ، وینکٹیش پرساد اور راجیش چوہان بھی شامل ہیں۔

جبکہ اس اصول میں کہا گیا ہے کہ ‘کمیٹی کے ممبروں میں سے سینئر ترین ٹیسٹ کیپ کو چیئرمین مقرر کیا جائے گا‘ ، اس سے قبل بی سی سی آئی کے صدر سوراو گنگولی نے واضح کیا کہ سب سے محدود ٹیسٹ کرکٹر سلیکٹرز کی ٹیم کا سربراہ ہوگا۔ انہوں نے کہا تھا کہ “یہ سب سے زیادہ ٹیسٹ لینے والا میچ ہوگا۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ جب جوشی ہارونڈر کے سینئر بھی ہیں تو جب وہ ’سینئر ترین ترین ٹیسٹ کیپ‘ ہونے کی شق کی بات کرتے ہیں۔ یہ جوڑی دیوانگ گاندھی (ایسٹ زون) ، سرندیپ سنگھ (نارتھ زون) اور جتن پروانجپے (ویسٹ زون) میں شامل ہوں گے۔



Source link

%d bloggers like this: