Emirates ID

اب ایمریٹس آئی ڈی ہی رہائشی دستاویز تصور ہو گی

دبئی ( یو اے ای اردو – ارشد فاروق بٹ ) آپ کی ایمریٹ آئی ڈی جلد ہی آپ کے لیے یو اے ای رہائشی دستاویز کے طور پر کام کرے گی۔ اگلے ہفتے سے، آپ کے پاسپورٹ پر رہائشی ویزا کی مہر نہیں لگائی جائے گی. یہ اقدام امارات میں رہائشیوں کو پیش کی جانے والی خدمات کوبہتر بنانے کے لیے اٹھایا گیا ہے.

موجودہ طریقہ کار کے مطابق ویزا درخواست کے عمل کا آخری حصہ ویزا سٹیمپنگ ہے۔ تمام متعلقہ دستاویزات کے ٹائپ آؤٹ ہونے کے بعد، درخواست گزار اپنا پاسپورٹ امیگریشن آفس میں بھجواتا ہے جس پر گلابی رنگ کا اسٹیکر سٹیمپ کیا جاتا ہے.

پیر 11 اپریل سے ویزا پاسپورٹ پر مہر نہیں لگے گی۔ ایمریٹس آئی ڈی کو ہی ریزیڈنسی ویزہ کا ثبوت سمجھا جائے گا۔ وفاقی اتھارٹی برائے شناخت اور شہریت کی جانب سے جاری کردہ سرکلر کے مطابق ایمریٹس آئی ڈی میں رہائشی سے متعلق تمام متعلقہ معلومات شامل ہیں۔

رہائشی ویزا اسٹیکر کیا ہے؟

کسی غیر ملکی کو رہائشی یا ریزیڈنسی ویزا جاری کیا جاتا ہے جب وہ داخلے کے اجازت نامے یا وزٹ ویزا کے ذریعے متحدہ عرب امارات میں داخل ہونے کے بعد ملک کے اندر ہوتا ہے۔

رہائشی ویزا کے لیے 18 سال یا اس سے زیادہ عمر کے درخواست دہندگان کو یہ ثابت کرنے کے لیے میڈیکل ٹیسٹ کروانے کی ضرورت ہوتی ہے کہ وہ طبی طور پر فٹ ہیں۔ انہیں سیکیورٹی چیک بھی پاس کرنا ہوتا ہے اور فیڈرل اتھارٹی برائے شناخت اور شہریت سے ایمریٹس شناختی کارڈ کے لیے درخواست دینا ہوتی ہے. اس عمل کے اختتام پر، رہائشی ویزا کا اسٹیکر درخواست گزار کے پاسپورٹ پر لگا دیا جاتا ہے۔

کیا رہائش کے اسٹیکرز دستیاب ہوتے رہیں گے؟

اتھارٹی کے قائم مقام ڈائریکٹر جنرل فارنرز افیئرز اینڈ پورٹس میجر جنرل سعید راکان الراشدی نے کہا ہے کہ ٹکٹس صرف اتھارٹی کی سمارٹ ایپلی کیشن کے ذریعے دستیاب ہوں گے۔ اس سے ریزیڈنسی سٹیمپ اور ایمریٹس آئی ڈی کے استعمال کے درمیان منتقلی کے مرحلے میں مدد ملے گی۔

سرکلر کے مطابق ایئر لائنز رہائشیوں کے ایمریٹس آئی ڈی اور پاسپورٹ نمبر کے ذریعے ان کی معلومات کی تصدیق کر سکیں گی۔ یہ پاسپورٹ ریڈر کے ذریعے کیا جا سکتا ہے۔ تبدیلیوں سے آگاہ کرنے کے لیے امارات کی جانب سے اسٹیک ہولڈرز میں سرکلر تقسیم کیا جائے گا۔

ایڈیٹر ارشد فاروق

ارشد فاروق
ارشد فاروق بٹ کالم نگار اور بلاگر ہیں۔ یو اے ای اردو ویب سائٹ پر آپ ویزہ گائیڈ اور اردو نیوز کی کیٹیگری اپڈیٹ کرتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔