رانا ثناءاللہ نے وزیراعلیٰ پنجاب سے استعفے کا مطالبہ کردیا

مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر رانا ثناءاللہ نے وزیراعلیٰ پنجاب سے استعفے کا مطالبہ کردیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ معصوم بچوں کا اصل قاتل عمران نیازی ہے جس نے پنجاب پرنا اہل ٹیم مسلط کی، عوام اوربچے نالائقوں کے ٹولے کی وجہ سےغیرمحفوظ ہوچکے،معصوم بچوں کے قاتلوں کوسزاملنے تک خاموش نہیں بیٹھیں گے۔
انہوں نے ساہیوال میں بچوں کی موت پر اپنے ردعمل میں کہا کہ پاکستان کےعوام اوربچے نالائقوں کے ٹولے کی وجہ سےغیرمحفوظ ہوچکے ہیں۔ معصوم بچوں کے قاتلوں کوسزاملنے تک خاموش نہیں بیٹھیں گے۔ متاثرہ خاندانوں کے ساتھ ہیں،ان کےغم میں شریک ہیں۔ کسی دوسرے کوقربانی کا بکرا بنانے کے بجائے نااہلوں کے سردارکوکٹہرے میں لائیں۔
رانا ثنااللہ نے کہا کہ واقعہ مجرمانہ غفلت، لاپرواہی اورانسانیت دشمنی کی انتہاء ہے۔
معصوم بچوں کے قاتلوں کوسزاملنے تک خاموش نہیں بیٹھیں گے۔ ساہیوال میں15معصوموں کےقاتلوں کوقانون کےکٹہرےمیں لایاجائے۔ دوسری جانب ترجمان وزیراعلیٰ پنجاب شہبازگل نے لیگی رہنماؤں کے بیان پرردعمل میں کہا کہ وزیراعظم اور5 رکنی وفد کے حوالے سے بھی منفی پروپیگنڈا کیا گیا۔ حمزہ اورمریم وہ وقت بھول گئے جب اقوام متحدہ میں80 لوگوں کا وفد لے کرجاتے رہے۔
شہبازگل نے کہا کہ ن لیگ نے اپنے دورمیں صحت کے شعبے پرکوئی توجہ نہیں دی۔ 3 دہائیوں سے حکومت کرنے والے اپنے خاندان کے علاج کے لیے ایک اسپتال نہ بنا سکے۔ شہبازگل نے کہا کہ مریم نوازاورحمزہ شہبازکو بچوں کی ہلاکت پرسیاست چمکانے پرشرم آنی چاہیے۔ بچوں کی ہلاکت کی وجہ ایئرکنڈیشنرکا نہ چلنا کہنا بےبنیاد اورمحض پروپیگنڈا ہے۔ شہبازگل نے کہا کہ محکمہ صحت کےاعلیٰ افسران اورکمشنرساہیوال واقعے کی انکوائری کررہےہیں۔
وزیراعلیٰ پنجاب نے محکمہ صحت اورکمشنرساہیوال کوانکوائری کا حکم دیا ہے۔ واضح رہے ڈسٹرکٹ ہسپتال کے چلڈرن وارڈ میں 5بچے چل بسے۔ اے سی بند ہونے کے معاملہ پروزیرصحت نے انکوائری کاحکم دے دیا۔ دورکنی کمیٹی نے انکوائری شروع کردی۔ تفصیلا ت کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ٹیچنگ ہسپتال کے چلڈرن وارڈ میں 5بچے موت کے منہ میں چلے گئے بچوں کی ہلاکت کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ 5بچوں کی ہلاکتوں میں 3 بچوں کی اموات ایئرکنڈیشنڈ بندہونے پر بتائی گئی ہیں۔
ڈپٹی کمشنر ساہیوال محمدزمان وٹو نے بچوں کی اموات کی حوالے سے سیکرٹری صحت کوخط لکھاہے جس میں ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی سفارش کی گئی ہے۔ ڈپٹی کمشنر نے چلڈرن وارڈ میں ہنگامی طورپر اے سی نصب کرادیاہے۔ دریں اثناء صوبائی وزیر صحت پنجاب کی ہدایت پر سیکرٹری صحت پنجاب نے ایڈیشنل سیکرٹری صحت رفاقت علی کی سربراہی میں 2رکنی کمیٹی انکوائری کے لئے بھجوائی ہے جس نے ہسپتال پہنچ کر ڈاکٹرز ودیگر سٹاف کے بیانات قلمبند کئے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں