Saudi Iqama holders can travel through Dubai

اقامہ ہولڈرز براستہ دبئی سعودی عرب کیسے جا سکتے ہیں؟

دبئی ( یو اے ای اردو – 15 ستمبر 2021 – ارشد فاروق بٹ) پاکستان میں مقیم سعودی اقامہ ہولڈرز براستہ دبئی سعودی عرب واپس جا سکتے ہیں. لیکن اس صورت میں انہیں اضافی اخراجات برداشت کرنا ہونگے. اس تحریر میں ان اخراجات کی مختصر تفصیل اور طریقہ کار درج ذیل ہے.

1. سب سے پہلا قدم سعودی اقامہ ہولڈرز کو متحدہ عرب امارات کے وزٹ یا سیاحتی ویزے کے لیے اپلائی کرنا چاہیے. پاکستانیوں کے لیے متحدہ عرب امارات کا وزٹ ویزہ سسٹم آج کل کچھ سست روی کا شکار ہے اور ویزہ کی منظوری میں 10 سے 15 دن لگ سکتے ہیں. وزٹ ویزہ پر 20 سے 25 ہزار روپے خرچ ہونگے.

2. اگر سعودی اقامہ ہولڈرز متحدہ عرب امارات کا وزٹ ویزہ حاصل کرنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں تو دوسرا مرحلہ فلائٹ بکنگ کا ہے. فلائی دبئی، ایئربلیو اور ایئرعریبیہ بہتر آپشن ہیں. آج بروز بدھ 15 ستمبر 2021 ملتان سے دبئی (فلائی دبئی) کا کرایہ ایک لاکھ 12 ہزار روپے ہے. جبکہ ایئر عریبیہ کا کرایہ ملتان سے شارجہ ایک لاکھ روپے ہے. اگر آپ کے پاس دبئی کا وزٹ ویزہ ہے تب بھی آپ شارجہ جا سکتے ہیں اور وہاں سے بذریعہ پبلک بس دبئی آ سکتے ہیں.

3. اگلا قدم دبئی جانے کے لیے دستاویزات مکمل کرنا ہے جس میں آئی سی اے کیو آر کوڈ کا حصول، مستند لیبارٹری سے پی سی آر ٹیسٹ اور ایئر پورٹ کے اندر ریپڈ ٹیسٹ وغیرہ شامل ہیں. دستاویزات کے بارے میں تفصیل سے پڑھنے کے لیے درج ذیل لنک پر کلک کریں.

یو اے ای سفر کے لیے ضروری دستاویزات کی فہرست

4. دبئی پہنچنے پر سعودی اقامہ ہولڈرز کو کم از کم 14 دن گزارنے ہونگے. اس کے بعد وہ ٹکٹ لے کر سعودی عرب جا سکتے ہیں. اس طریقے سے سعودی اقامہ ہولڈرز کے پاکستان سے براستہ دبئی سعودی عرب جانے پر ٹوٹل اخراجات 3 لاکھ تک آسکتے ہیں. اگر آپ طویل عرصے سے پاکستان میں ہیں اور سعودی عرب نہیں جا پا رہے تو یہ ایک آپشن ہے.

Guest Post on High Authority Website with Dofollow Backlink

ایڈیٹر ارشد فاروق

ارشد فاروق
ارشد فاروق بٹ کالم نگار اور بلاگر ہیں۔ یو اے ای اردو ویب سائٹ پر آپ ویزہ گائیڈ اور اردو نیوز کی کیٹیگری اپڈیٹ کرتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے