UAE residence visa FAQs

چھ ماہ سے پاکستان میں مقیم یواےای اقامتی ویزہ ہولڈرز کے لیے کیا پالیسی ہو گی؟

دبئی ( یو اے ای اردو – 15 جولائی 2021 – ارشد فاروق بٹ) متحدہ عرب امارات کی جانب سے پاکستان پر لگائی جانے والی سفری پابندیوں سے یو اے ای کے اقامتی ویزہ ہولڈرز سخت پریشانی کا شکار ہیں۔ کچھ سوالات ایسے ہیں جن کا یو اے ای حکومت کو جواب دینا چاہئے لیکن مسلسل یاد دہانیوں کے باوجود دوسری طرف خاموشی ہے۔

ایئر لائنز کے پاس سوالوں کا سیلاب ہے لیکن یو اے ای حکومت کی طرف سے کوئی واضح ہدایت نہ ہونے کے باعث مختلف ایئر لائنز سفری پابندیوں میں مسلسل توسیع کرتی چلی آ رہی ہیں۔

انہی سوالوں میں ایک سوال یہ ہے کہ ایسے پاکستانی مسافر جن کے پاس یو اے ای کا ویزہ ہے اور انہیں پاکستان میں پھنسے 6 ماہ سے زائد ہو گئے ہیں وہ فلائٹس اوپن ہونے پر دبئی کا سفر کر سکیں گے یا نہیں؟

اس سے قبل متحدہ عرب امارات کا قانون یہ کہتا ہے کہ اگر ایک ویزہ ہولڈر چھ ماہ سے زائد امارات سے باہر رہتا ہے تو اس کا ویزہ کینسل کر دیا جاتا ہے۔ اور وہ اس ویزہ پر امارات کا سفر نہیں کر سکتا۔

وبائی مرض کرونا کے باعث خصوصی حالات میں متحدہ عرب امارات نے سال 2020 میں ایسے پاکستانیوں کو امارات کے سفر کی اجازت دے دی تھی جن کو پاکستان میں رہتے چھ ماہ سے زائد ہو گئے تھے۔ اس لیے اقامتی ویزہ ہولڈرز کو امید رکھنی چاہئے کہ سال 2021 میں بھی یو اے ای حکومت اجازت دے دے گی۔

یہ اور اس سے ملتے جلتے سوالات مختلف ایئر لائنز کے پاس تو پہنچ رہے ہیں لیکن یو اے ای حکومت اس بارے میں کوئی واضح ہدایت جاری نہیں کر رہی۔ جس سے لگتا ہے کہ ایمریٹس ایئر لائن نے پاکستانی مسافروں پر جو سفری پابندی لگائی ہے اس میں شاید ایک بار پھر توسیع کر دے۔

ایڈیٹر ارشد فاروق

ارشد فاروق
ارشد فاروق بٹ کالم نگار اور بلاگر ہیں۔ یو اے ای اردو ویب سائٹ پر آپ خبروں کی کیٹیگری اپڈیٹ کرتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے